Home EPaper Urdu EPaper Hindi Urdu Daily News National Uttar Pradesh Special Report Editorial Muharram Entertainment Health Support Avadhnama

کون کس کو گمراہ کررہا ہے؟

ads

9415018288

این آر سی، این آر پی، سی اے اے سے صرف مسلمانوں کا کیا لینا دینا، یہ تو پورے بھارت کیلئے ہے اور سبھی بھارتیوں کے لئے ہے، اس کا نفع نقصان سبھی کو ہونا ہے بس کسی کو کم کسی کو زیادہ، اس سے ملک میں خوشحالی آئے گی، روزگار آئے گا، اقتصادی حالت میں ترقی ہوگی، دہشت گردی ختم ہوگی، اگر اختصار میں کہیں تو رام راج آئے گا اور رام راج کسے نہیں چاہئے، ہندو مسلمان سب برسوں سے رام راج کا ہی تو انتظار کررہے ہیں، لیکن یہ بات حکومت عام شہریوں کو نہیں بتا پارہی ہے جبکہ اس کے پاس اسے بتانے اسے سمجھانے کے سبھی ذرائع ہیں، پولیس ہے، پورا وزارتِ اطلاعات ہے، سبھی چینل ہیں، پورا پرنٹ میڈیا ہے، دوردرشن اور آکاش وانی تو حکومت کے اپنے ہی ہیں، پوری فلم انڈسٹری ہے جو فوراً اس پر ایک پوری فلم بناکر ریلیز کرسکتی ہے کہ جب یہ نافذ ہوگا تو کون سے کاغذ پیش کرنے ہوں گے، وہ کاغذ کیسے بنیں گے، کہاں سے بنیں گے، کون بنائے گا اور جو مانگے گئے کاغذات نہیں دے پائے گا اس کے ساتھ پھر حکومت کیا کرے گی؟
دوسری طرف اپوزیشن ہے جس کے پاس اس میں سے کوئی ایک چیز بھی نہیں، وہ حاشئے پر ہے، ابھی 6 ماہ قبل پارلیمانی الیکشن میں دھول چاٹ چکا ہے، نہ کوئی کیڈر ہے نہ کارکن، نہ فالوور، ہر کوئی، پپو، کا مذاق اُڑا رہا ہے لیکن وہ ہے جو پورے ملک کو گمراہ کئے دے رہا ہے؟ اور وہاں سب سے زیادہ گمراہ کررہا ہے جہاں مرکزی اور ریاستی حکومت ایک ہی ہیں اور گمراہ کرنے کیلئے ایسی ایسی باتیں کررہا ہے جس سے لوگوں کو لازماً گمراہ ہونا پڑرہا ہے، وہ سوال کررہا ہے کہ اگر بنگلہ دیش، پاکستان اور افغانستان سے ہندو، سکھ، عیسائی، پارسی، جین وغیرہ جو وہاں پر اقلیت ہیں کو ہی مذہبی بنیاد پر بھارت میں شہریت دی جانی ہے، اگر منشاء صرف یہی ہے تو ان 6 لوگوں کے نام لینے کے بجائے کیا صرف اتنا کافی نہیں تھا کہ کہہ دیا جاتا کہ ان تین ممالک کے اقلیتوں کا مذہبی استحصال کی بنیاد پر شہریت دی جائے گی، اس میں کسی مذہب کا نام لینے کی ضرورت کیا تھی۔ مسلمانوں کا پتہ تو تب بھی صاف ہوجاتا پھر نہ بابا صاحب کے آئین کی دُہائی ہوتی، نہ مسلمانوں کو ان کا نام لے کر ڈرایا جاتا، لیکن منشاء تو صرف ہندوئوں کو لبھانا ہے اور کچھ نہیں، کبھی اپوزیشن کہہ رہا ہے کہ اگر ہم نے ان تین ممالک سے وہاں کے اقلیتوں کو استحصال کی بنیاد پر اپنے ملک کی شہریت دی اور کاغذ نہ ہونے کی بنیاد پر یہاں کے اقلیتوں کو باہر نکالا تو تمام عرب ممالک میںجو یہاں کے ہندو ہزاروں ڈالر کماکر ملک کی ایکونامی کو مضبوط کررہے ہیں انہیں واپس آنا پڑے گا اور وہ تو بے روزگار ہوں گے ہی ملک میں غیرملکی کرنسی بھی نہیں آئے گی ایسی صورت میں بھارت کی اقتصادی حالت اور خراب ہوگی۔ وہ اس کا بھی غلط تشہیر کررہے ہیں کہ اپنے کاغذ بنوانے کے لئے سبھی 137 کروڑ بھارتیوں کو لائنوں میں لگنا ہوگا، اپنا کام کاج چھوڑنا ہوگا اور اس میں ہزاروں کروڑ جو روپئے خرچ ہوں گے وہ کہاں سے آئیں گے کون دے گا؟
لیکن حکومت نے اب گھر گھر جانے کی جو اسکیم بنائی اس کا ہم سب کو خیرمقدم کرنا چاہئے کیونکہ اب دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہوجائے گا ساری غلط فہمیاں دور ہوجائیں گی ساری گمراہی ختم ہوجائے گی، اپوزیشن کا شرپسندی پھیلانے کا خواب چکناچور ہوجائے گا اگر حکومت یہ سمجھانے میں کامیاب ہوگئی کہ 137 کروڑ بھارتیہ اپنی شہریت کیسے ثابت کریں گے اور جو بھی ثابت نہیں کرپایا اس کے ساتھ حکومت کیا کرے گی۔
٭٭٭

ads

Leave a Comment

ads

You may like

Hot Videos
ads
In the news
post-image
Marquee Slider Special Report Sports Urdu

آئی سی سی ایوارڈ کا اعلان، اسٹوکس سال کے بہترین کرکٹر کا ایوارڈ لے اڑے

دبئی: انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے 2019 کے سالانہ ایوارڈز کا اعلان کردیا اور انگلینڈ کو عالمی چیمپیئن بنوانے والے مایہ ناز انگلش آل راﺅنڈر بین اسٹوکس...
post-image
Marquee Politics Slider Uttar Pradesh

नागरिक कानून के तहत यूपी में अब तक 32 हजार शरणार्थी चिह्नित

नागरिक संशोधन कानून की अधिसूचना जारी होने के साथ ही उत्तर प्रदेश में रह रहे शरणार्थियों की पहचान का काम तेज हो गया है। प्रदेश के गृह विभाग के...
post-image
Marquee National Politics Slider

यह भी खूब रही ओवैसी का ऐलान- ‘पैसा कांग्रेस से लो मगर वोट मुझे दो’

आल इंडिया मजलिस-ए-इत्तेहादुल मुस्लमीन के अध्यक्ष और हैदराबाद से सांसद असदुद्दीन ओवैसी एक बार फिर चर्चा में हैं। उन्होंने लोगों से कहा है कि वह कांग्रेस से पैसा लें...
Load More
ads